0
Wednesday 12 Aug 2020 08:47

نیب لاہور کے دفتر پر حملہ، 187 لیگی رہنماوں، 3 سو کارکنوں کیخلاف مقدمہ درج

نیب لاہور کے دفتر پر حملہ، 187 لیگی رہنماوں، 3 سو کارکنوں کیخلاف مقدمہ درج
اسلام ٹائمز۔ مریم نواز شریف کی پیشی کے دوران نیب دفتر کے باہر ہنگامہ آرائی اور پولیس اہلکاروں کے زخمی ہونے کے معاملے پر نیب لاہور کی طرف پر چوہنگ پولیس نے مریم نواز شریف سمیت 187 رہنماؤں اور 300 کارکنوں کیخلاف مقدمہ درج کر لیا ہے۔ چوہنگ پولیس کو اندراج مقدمہ کی درخواست ڈپٹی ڈائریکٹر اینٹلی جنس اینڈ سکیورٹی نیب لاہور چودھری محمد اصغر کی طرف دی گئی۔ مقدمے میں تعزیرات پاکستان کی دفعہ 422، 290،440،186،353،148،149، 16 ایم پی او شامل کی گئی ہیں۔

ایف آئی آر میں مریم نواز، کیپٹن ریٹائرڈ صفدر اعوان، ایم این اے رانا ثنا اللہ، ایم پی اے مرزا جاوید، ایم پی اے بلال یاسین، ایم این اے ملک ریاض، پرویز ملک، سابق گورنر سندھ زبیرعمر، ایم پی اے یاسین سوہل، ایم پی اے پیر اشرف رسول، طلال چودھری، سینیٹر پرویز رشید، دانیال عزیز، خرم دستگیر، سابق مئیر لاہور کرنل ریٹائرڈ مبشر جاوید، سابق ڈپٹی مئیر لاہور رائو شہاب الدین سمیت 187 سابق اور موجودہ ارکان قومی و صوبائی اسمبلی سمیت رہنمائوں کے نام بھی شامل کئے گئے ہیں۔ آیف آئی آر میں میں 300 کارکنوں کو بھی نامزد کیا گیا ہے۔

آیف آئی آر میں موقف اختیار کیا گیا ہے کہ مریم نواز نے نیب میں پیش ہو کر جواب دینے کی بجائے شوہر صفدر اعوان کی ایماء پر کارکنوں کو اُکسایا۔ اکسانے پر کارکنوں نے غنڈہ گردی اور پتھرائو کیا۔ پتھرائو سے نیب عمارت کے شیشے ٹوٹ گئے۔ مریم نواز کیساتھ آنیوالے گاڑیوں میں پتھر لے کر آئے۔ آیف آئی آر کے متن کے مطابق نیب کی 20 سالہ تاریخ میں پہلی بار ایسا پہلا منظم حملہ کیا گیا۔ یہ شرپسندانہ حرکت مریم نواز اور صفدر اعوان نے منظم منصوبہ بندی سے کی۔

ادھر کیپٹن صفدر کی طرف سے لیگل ٹیم کی وساطت سے عمران خان، چئیرمین نیب، شہزاد اکبر سمیت دیگر شخصیات اور 100 پولیس اہلکاروں کیخلاف مقدمہ درج کرنے کیلئے درخواست تھانے پہنچائی گئی جسے پولیس نے وصول کرنے سے انکار کر دیا۔ پولیس کیطرف سے زخمی ہونیوالے اہلکاروں کا میڈیکل آج کروایا جائے گا جبکہ گرفتار لیگی کارکنوں کو مختلف تھانوں میں رکھا گیا ہے۔
خبر کا کوڈ : 879751
رائے ارسال کرنا
آپ کا نام

آپکا ایمیل ایڈریس
آپکی رائے

منتخب
ہماری پیشکش