0
Saturday 12 Sep 2020 19:49

اسرائیل کیساتھ تعلقات قائم کرنے کو فلسطینی موقف سے کھلا انحراف سمجھتے ہیں، کانفرنس کا اعلامیہ

اسرائیل کیساتھ تعلقات قائم کرنے کو فلسطینی موقف سے کھلا انحراف سمجھتے ہیں، کانفرنس کا اعلامیہ
اسلام ٹائمز۔ علماء و ذاکرین کانفرنس کے اختتام پر قراردادیں منظور کی گئیں اور شرکاء نے متفقہ طور پر ان قراردادوں کی اللہ اکبر کا نعرہ لگا کر منظوری دی۔ علماء و ذاکرین کانفرنس کی قراردادوں کا متن درج ذیل ہے۔
1۔ آج کا یہ عظیم الشان اجتماع فرانس سے شائع ہونے والے چارلی ایبڈو میگزین میں پیغمبر اسلام حضرت محمد صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کی شان اقدس کے حوالے سے شائع کردہ گستاخانہ خاکوں اور سوئیڈن میں قرآن مجید کی بےحرمتی کے مذموم واقعے کی پر زور مذمت کرتا ہے۔
2۔ یہ اجتماع عرب امارات، بحرین اور دیگر عرب ممالک کے اسرائیل کے ساتھ تعلقات کی بحالی کو فلسطینی موقف سے کھلا انحراف سمجھتے ہوئے اس صورتحال پر اپنے غم و غصہ کا اظہار کرتا ہے۔
3۔ علماء و ذاکرین کانفرنس کا یہ عظیم الشان اجتماع مقبوضہ کشمیر کے مسلمان بھائیوں سے اظہار یکجہتی کرتے ہوئے ان پر توڑے جانے والے بھارتی مظالم کی شدید مذمت کرتا ہے۔

4۔ پاکستان کا آئین اپنے تمام شہریوں کو اظہار رائے کے یکساں مواقع فراہم کرتا ہے اور ملت تشیع اس کی دفاعی و نظریاتی سرحدوں کی محافظ ہے۔ اس ملت نے طول تاریخ میں ہزاروں قیمتی جانوں کی قربانی دے کر وطن عزیز کو عدم استحکام کا شکار ہونے سے بچایا ہے اور کسی بھی صورت شرپسند عناصر کو فرقہ واریت پھیلانے کا موقع نہیں دیا اور نہ ہی آئندہ اس قسم کی کسی کوشش کو کامیاب ہونے دیا جائے گا۔
5۔ یہ عظیم الشان اجتماع مطالبہ کرتا ہے کہ ملک بھر میں مجالس عزا اور روایتی جلوسوں کے خلاف جو ایف آئی آرز درج کی گئی ہیں، ان کو فی الفور واپس لیا جائے اور یہ اجتماع یہ بھی واضح کرتا ہے کہ عزاداری سید الشہداء کے راستے میں آنے والی کسی بھی رکاوٹ کو ہرگز قبول نہیں کیا جائے گا، لہٰذا ایسے کسی بھی اقدام سے گریز کیا جائے، ورنہ حالات کی تمام تر ذمہ داری ارباب اختیار پر ہوگی۔

6۔ شیعہ قوم کے قائدین و بزرگان نے پوری امت کو ہمیشہ اتحاد و وحدت کی دعوت دی ہے اور فرقہ واریت پھیلانے والے تمام عناصر کی ہمیشہ مذمت کی ہے۔
7۔ شیعہ قوم کے قائدین و بزرگان ایک غیر ذمہ دار شخص کی طرف سے ہونے والی گستاخی سے بیزاری کا اعلان کرتے ہیں اور ایک فرد کی دریدہ دہنی کو جواز بنا کر شیعہ قوم کے خلاف اسی نوعیت کی دریدہ دہنی کو غیر شرعی اور سنگین جرم قرار دیتے ہیں۔
8۔ یہ اجتماع پنجاب اسمبلی کے اجلاس میں پیش کردہ تحفظ بنیاد اسلام بل کو متنازع قرار دیتے ہوئے یکسر مسترد کرتا ہے جبکہ اس حوالے سے پہلے سے ہی قانون موجود ہے، لہٰذا تحفظ بنیاد اسلام جیسے متنازعہ بل کو فی الفور واپس لیا جائے۔
خبر کا کوڈ : 885878
رائے ارسال کرنا
آپ کا نام

آپکا ایمیل ایڈریس
آپکی رائے

منتخب
ہماری پیشکش