0
Monday 14 Sep 2020 13:53

گجرپورہ موٹر وے زیادتی کیس کے اہم ملزم عباس نے گرفتاری دیدی، تفتیش جاری

گجرپورہ موٹر وے زیادتی کیس کے اہم ملزم عباس نے گرفتاری دیدی، تفتیش جاری
اسلام ٹائمز۔ گجرپورہ موٹر وے زیادتی کیس کے اہم ملزم عباس نے گرفتاری دے دی، عباس پر مرکزی ملزم عابد کے ساتھ کیس میں ملوث ہونے کا الزام ہے، عباس کے 2 بھائیوں کو پولیس نے صبح حراست میں لیا تھا، جس کے بعد عباس نے خود کو پولیس کے حوالے کردیا، کیس میں ایک اور ملزم شفقت کا نام بھی سامنے آیا ہے۔ گجرپورہ میں لاہور سیالکوٹ موٹر وے پرخاتون سے زیادتی کے کیس میں اہم پیشرفت سامنے آئی ہے، وقارالحسن کے بعد ان کے برادرنسبتی عباس نے بھی گرفتاری دے دی۔ عباس کے اہل خانہ کا کہنا ہے کہ عباس نے اپنی رہائش گاہ پر پولیس کو گرفتاری دی۔ گجرپورہ ریپ کیس میں پولیس کی آنیاں جانیاں برقرار ہیں، کیس کے چھ روز گزرنے کے باوجود بھی مرکزی ملزم عابد علی پولیس کی پہنچ سے دور ہے، ملزم عابد کو زمین کھا گئی یا آسمان نگل گیا کسی کو کچھ پتا نہیں۔ مشتبہ ملزم وقار الحسن نے گزشتہ روز گرفتاری دی تھی جبکہ وقار الحسن کے 4بھائی پہلے سے گرفتار ہیں، پولیس نے وقار کے 2 سالوں کو بھی گرفتار کرلیا، تمام افراد کو نامعلوم مقام پر منتقل کردیا گیا ہے۔

وقار کے سالوں نے نئے ملزم شفقت کی نشان دہی کردی، پولیس کا کہنا ہے کہ شفقت کا کرمنل ریکارڈ موجود ہے اور شفقت کے شریک ملزم ہونے کے قوی امکانات ہیں۔ مشتبہ ملزم وقار کے مطابق اس کی موبائل سم سے اس کے سالے غلام عباس کا مرکزی ملزم عابد علی سے رابطہ رہتا تھا جبکہ وقار کا کہنا ہے کہ وہ بےگناہ اور اس کا ملزم عابد سے کوئی تعلق نہیں ہے۔ میڈیا کے نمائندوں نے ملزم عابد اور وقار کے گاؤں میں گزشتہ روز جاکر تحقیق کی تو یہ بات سامنے آئی کہ جب پولیس دھوم دھڑکے کے ساتھ عابد کو گرفتار کرنے گاؤں پہنچی تو عابد اہل خانہ کے ساتھ ساتھ بآسانی فرار ہوگیا۔ لاہور سیالکوٹ موٹروے پر خاتون سے زیادتی کے ملزم وقار الحسن کے برادرنسبتی عباس کا بیان سامنے آگیا۔ عباس نے گرفتاری سے قبل اپنے بیان میں کہا کہ پولیس کو گرفتار ی دے رہا ہوں، میں بےقصور ہوں، امید ہے متاثرہ خاتون کو انصاف ملے گا، امید ہے پولیس میرے ساتھ بھی انصاف کرے گی۔
خبر کا کوڈ : 886138
رائے ارسال کرنا
آپ کا نام

آپکا ایمیل ایڈریس
آپکی رائے

منتخب
ہماری پیشکش