0
Tuesday 15 Sep 2020 22:40

 جب تک درندوں کو پھانسی پر نہیں لٹکایا جاتا، جرائم پر قابو نہیں پایا جاسکتا، سراج الحق 

 جب تک درندوں کو پھانسی پر نہیں لٹکایا جاتا، جرائم پر قابو نہیں پایا جاسکتا، سراج الحق 
اسلام ٹائمز۔ امیر جماعت اسلامی پاکستان سینیٹر سراج الحق نے عالمی یوم جمہوریت کے موقع پر اپنے بیان میں کہاہے کہ پاکستان ایک جمہوری عمل کے ذریعے بنا تھا مگر 73سال میں یہاں جمہوریت کو قدم نہیں جمانے دیے گئے۔ ملک پر 35سال آمریت رہی اور باقی آدھا عرصہ جمہوریت کے نام پر شخصی حکومتیں مسلط رہیں۔ ملک میں جمہوریت یرغمال ہے اور انتخابی نظام اور ووٹرز آزاد نہیں، جمہوریت پر جاگیرداروں، وڈیروں اور سرمایہ داروں نے اپنی دولت کے بل بوتے پر قبضہ کر رکھاہے، شفاف اور غیرجانبدار انتخابی نظام کے بغیرجمہوری اقدار پنپ نہیں سکتیں۔ اقتدار کے ایوانوں پر اشرافیہ اور ارب پتیوں کا قبضہ ہے انہی کے بیٹے اور پوتے اسمبلیوں میں پہنچتے ہیں، غریب کے لیے اسمبلیوں میں پہنچنا ممکن نہیں۔ 

سینیٹر سراج الحق نے کہاکہ ملک میں اب بھی پیپلزپارٹی، نواز لیگ اور مشرف دور کا ظلم و جبر کا نظام ہے، تبدیلی صرف یہ آئی ہے کہ رشوت اور کرپشن بڑھ گئی ہے اور روز مرہ اشیا کی قیمتوں میں کئی گنا اضافہ ہوگیاہے، کسی غریب کو تعلیم، صحت، ر وزگار ملتا ہے نہ عدالتوں سے انصاف، مزدور اور کسان سارا دن خون پسینہ ایک کرنے کے باوجود پیٹ بھر کر کھانے سے محروم ہیں۔ امن و امان کی صورتحال اتنی مخدوش ہے کہ مائیں، بہنیں، بیٹیاں گھروں میں بیٹھے ہوئے بھی خوف و ہراس کا شکا ر ہیں۔ انہوں نے کہا کہ المیہ یہ ہے کہ حکمران ناکامی تسلیم کرنے کی بجائے کامیابیوں کے دعوے کر رہے ہیں، حکمرانوں کے یہ دعوے عوام کے زخموں پر نمک پاشی کے مترادف ہیں۔ 

سینیٹر سراج الحق نے کہاکہ پی ٹی آئی حکومت میں کرپشن، رشوت اور جرائم میں اضافہ ہوا، آئے روز بچیوں کا اغوا، گینگ ریپ اور قتل، لگتا ہے ملک میں کوئی حکومت نہیں، اب تو چوک چوراہے اور شاہراہیں بھی محفوظ نہیں، جب تک درندوں کو پھانسی پر نہیں لٹکایا جاتا جرائم پر قابو نہیں پایا جاسکتا۔ جنسی درندگی کے بڑھتے ہوئے واقعات معاشرے کو تباہی کی طرف لے جارہے ہیں۔ حکومتی رٹ کہیں نظر نہیں آتی، چاروں طرف مایوسی کے اندھیروں نے ڈیرے ڈال رکھے ہیں۔ 
خبر کا کوڈ : 886448
رائے ارسال کرنا
آپ کا نام

آپکا ایمیل ایڈریس
آپکی رائے

منتخب
ہماری پیشکش