0
Saturday 21 Nov 2020 23:34
ایک ٹرمپ تو چلا گیا، اب پاکستانی ٹرمپ کو ہٹانا ہے

مولانا فضل الرحمان نے بھی موجودہ حکومت کو کورونا قرار دیدیا

مولانا فضل الرحمان نے بھی موجودہ حکومت کو کورونا قرار دیدیا
اسلام ٹائمز۔ سربراہ پی ڈی ایم مولانا فضل الرحمن نے کہا ہے کہ پشاور میں عظیم الشان اور تاریخی جلسہ ہوگا، جسے روکنے کی حکمرانوں کی کوششیں رائیگاں جائیں گی۔ پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ ملک میں اس وقت ناجائز اور نااہل حکومت کیخلاف تحریک جوبن پر ہے، یہ ناجائز حکومت سب سے بڑا کورونا ہے، اس سے نجات مل جائے تو قوم تندرست ہو جائے گی، ہم ’’کوڈ 18‘‘ کے خلاف برسر پیکار ہیں۔ فضل الرحمان نے کہا کہ ریاستی اداروں کو غیر جانبدار رہنا چاہیئے کیونکہ ملک ڈوب رہا ہے، یہ حکومت انہی کے سہارے آئی اور وہ یہ سہارا ختم کر دیں، ہم قوم اور اسٹیبلشمنٹ کو ایک ہی صفحہ پر لانا چاہتے ہیں، ملک کے مالک عوام ہیں اور کوئی نہیں، ملک کو خطرہ ہے تو عوام، فوج اور ہم سب کو اکٹھا ہونا چاہیئے۔ انہوں نے کہا کہ بجٹ کی سالانہ شرح نمو اعشاریہ 4 پر پہنچ گئی، ملک معاشی انحطاط کا شکار ہو تو ملک کا وجود خطرے میں پڑ جاتا ہے، ریاستی ادارے اپنا کردار ادا کریں، ریاستی ادارے ایسی ناجائز حکومت کی پشت پناہی نہ کریں، کیا وہ بھی ریاست کے خطرے کے ذمہ دار ہیں۔؟

وزیراعظم عمران خان کا نام لیے بغیر انہوں ںے کہا کہ ایک ٹرمپ تو چلا گیا، اب پاکستانی ٹرمپ کو ہٹانا ہے، انڈین ٹرمپ کے بارے میں بھارتی جانیں، ہم سب جماعتیں مقاصد کے حصول کے لیے یکسو ہیں، یہ حکومت چوری کی مینڈیٹ کی نمائندہ ہے، پی ڈی ایم اپنے بنیادی مقصد اور منشور کا اعلان کرچکی ہے، ہم اگلا شیڈول جلد دیں گے، جس کے ساتھ تحریک کی اگلی حکمت عملی بھی ہوگی، انہیں آرام سے نہیں بیٹھنے دیں گے۔ واضح رہے کہ پشاور انتظامیہ نے تاحال اپوزیشن اتحاد کو جلسے کی اجازت نہیں دی جبکہ خیبر پختونخوا کے صوبائی وزراء نے اعلان کیا ہے کہ پی ڈی ایم کے جلسے کے بعد کورونا میں اضافہ ہوا تو اپوزیشن کے خلاف مقدمات درج کیے جائیں گے۔ وزیراعظم عمران خان بھی اپنے ایک بیان میں کورونا وبا کے دوران اجتماعات کے انعقاد پر اپوزیشن پر کڑی تنقید کرچکے ہیں۔
خبر کا کوڈ : 899209
رائے ارسال کرنا
آپ کا نام

آپکا ایمیل ایڈریس
آپکی رائے

منتخب
ہماری پیشکش