0
Monday 11 Jan 2021 18:57

سید علی رضوی سے صوبائی وزیر کاظم میثم کی ملاقات، اب تک کی مجموعی کارکردگی پر بریفنگ

سید علی رضوی سے صوبائی وزیر کاظم میثم کی ملاقات، اب تک کی مجموعی کارکردگی پر بریفنگ
اسلام ٹائمز۔ مجلس وحدت مسلمین گلگت بلتستان کے سیکرٹری جنرل آغا علی رضوی کے سکردو پہنچتے ہی صوبائی وزیر زراعت کاظم میثم نے ان سے ملاقات کی۔ صوبائی وزیر زراعت کاظم میثم نے آغا علی رضوی سے اب تک کی مجموعی کارکردگی، فعالیت، عوامی مسائل کے حوالے سے اٹھائے گئے اقدامات پر بریفنگ دی اور تمام ایشوز پر تبادلہ خیال کیا۔ اس موقع پر سیکرٹری جنرل مجلس وحدت مسلمین گلگت بلتستان آغا علی رضوی نے صوبائی وزیر زراعت سے کہا کہ اجتماعی مسائل پر خصوصی توجہ دیں۔ گلگت بلتستان کی تعمیر و ترقی کے لئے بڑے منصوبوں کا آغاز ضروری ہے۔ بلتستان ریجن کو حفیظ کے دور میں بری طرح نظر انداز کیا گیا۔ موجودہ حکومت سے توقع رکھتے ہیں کہ وہ تمام علاقوں پر یکساں توجہ دے گی اور علاقے کی محرومی کے پیش نظر اہم اقدامات اٹھائے گی۔

انہوں نے کہا کہ میرٹ کو پامال نہیں ہونے دینا ہے، عدل و انصاف کی بالادستی کے لئے جدوجہد کرنی ہے، ظلم کے خلاف بھرپور آواز بلند کرنی ہے، عہدہ اور وزارت اللہ کی طرف سے امانت ہے، لہذا اس فرصت سے فائدہ اٹھاتے ہوئے محروم علاقے کی تعمیر و ترقی کے لئے اپنا کردار ادا کرتے رہیں۔ سید علی رضوی نے ہدایت کرتے ہوئے کہا کہ تعلیمی مسائل کا حل فوری ضروری ہے، لہذا معیار تعلیم کے لئے خصوصی اقدامات اٹھانے کی ضرورت ہے، اسی طرح صحت کے گونا گوں مسائل ہیں، ان میں تبدیلی نظر آنی چاہیئے۔ 250 بیڈ ہسپتال کی تعمیر میں تیزی لانے کی ضرورت ہے۔ سید علی ضوی نے مزید کہا کہ لوڈشیڈنگ پورے گلگت بلتستان کا مسئلہ ہے، لہذا شتونگ نالے کی ڈائیورجن، شغرتھنگ پاور پروجیکٹ، ہرپوہ پاور پروجیکٹ، ہینزل پاور پروجیکٹ سمیت دیگر بجلی کے منصوبوں پر پر فوری کام کرنے اور اس میں شفافیت لانے کی ضرورت ہے۔

موجودہ حکومت کے عملی اقدامات میں شفافیت، میرٹ، عدل و انصاف کی بالادستی اور کام میں معیاری اور واضح فرق اور تبدیلی محسوس ہونی چاہیئے۔ صوبائی حکومت کے سربراہ خالد خورشید سے گلگت بلتستان بالخصوص بلتستان کے عوام کی توقعات وابستہ ہیں۔ شونٹر پاس اور شغرتھنگ سے استور تک کے راستے کی تعمیر کے لیے بھی فوری اقدامات کی ضرورت ہے۔ آغا علی رضوی نے صوبائی وزیر زراعت کاظم میثم کو مزید تاکید کرتے ہوئے کہا کہ گلگت بلتستان کو آئینی دائرے میں شامل کرنا اور عوامی امنگوں کے مطابق سیٹ اپ دینا اہم ترین معاملہ ہے، جس پر کسی بھی جماعت کو سیاست کرنے نہ دیں کیونکہ یہ ستر سالہ محرومیوں کا ازالہ ہے۔
خبر کا کوڈ : 909538
رائے ارسال کرنا
آپ کا نام

آپکا ایمیل ایڈریس
آپکی رائے

منتخب
ہماری پیشکش