0
Saturday 1 May 2021 23:23

یوم ضربت علیؑ عالم اسلام کا بڑا سانحہ، انتہاء پسندی کی گھناﺅنی مثال ہے، علامہ ساجد نقوی

یوم ضربت علیؑ عالم اسلام کا بڑا سانحہ، انتہاء پسندی کی گھناﺅنی مثال ہے، علامہ ساجد نقوی
اسلام ٹائمز۔ شیعہ علماء کونسل پاکستان کے سربراہ علامہ سید ساجد علی نقوی کہتے ہیں یوم ضربت علی ابن طالبؑ عالم اسلام کا بڑا سانحہ جو داخلی انتہاء پسندی، شدت پسندی کی گھناﺅنی مثال ہے، یہ ضربت دراصل اسلام کے تشخص، نظام عدل، گڈ گورننس، عوامی و انسانی حقوق کے لئے عمل پیرا نظام حکومت پر وار ہے، یوم القدس مظلوم فلسطینیوں کے ساتھ اظہار یکجہتی کا قومی و عالمی دن ہے، ایس او پیز پر سختی سے عمل پیرا ہوکر منایا جائے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے 19 رمضان المبارک کو یوم ضربت امیر المومنینؑ اور یوم القدس پر اپنے پیغام میں کیا۔ علامہ سید ساجد علی نقوی نے کہا کہ یوم ضربت امیر المومنین دراصل گھناﺅ نا اقدام ہے جو داخلی انتشار، انتہاء پسندی اور شدت پسندی کی جانب متوجہ کرتا ہے جس کے ذریعہ نفس پیغمبر حضرت علیؑ جیسی بلند و بالا شخصیت کی فعالیت، حسن عمل، انسانی حقوق کی عمل داری کی حقیقی و عملی کوشش، بہترین نظام حکومت اور رہتی دنیا تک عدل و انصاف کی مثالی حکومت کو زیر کرنے کی گھناﺅنی سازش کی گئی۔

ان کا کہنا تھا کہ یوم ضربت اسلام کی تاریخ کا ایک بڑا سانحہ ہے، جس دن قرآن و سنت کے نظام پر وار ہوا، جس دن سنت پیغمبر کو پامال اور نفس پیغمبر پر وار ہوا، عادل نظام حکومت پر وار ہوا، وہ نظام عدل جو رہتی دنیا تک پوری انسانیت کے لئے نمونہ رہے گا، اسی لئے تو ایک غیر مسلم مورخ نے اپنی کتاب کے انتساب میں الفاظ لکھے کہ اس علیؑ کے نام جنہیں شدت عدل کی وجہ سے قتل کردیا گیا۔ آج اگر دنیا میں عدل علوی کی روشنی میں حکومتیں قائم ہوتیں تو فلسطین و کشمیر سمیت دنیا میں مظلوم اس طرح دربدر نہ ہوتے، طبقاتی تفریق نہ ہوتی، حکمران سے رعایا تک سب کے لئے یکساں نظام انصاف ہوتا۔ یوم القدس کے حوالے سے انہوں نے کہا کہ یوم القدس مظلوم فلسطینی عوام کے ساتھ اظہار یکجہتی کا قومی و بین الاقوامی دن ہے، اس موقع پر عوام ایس او پیز پر سختی سے عمل پیرا ہوکر اپنے فلسطینی بھائیوں سے اظہار یکجہتی کریں اور عالمی استعمار کے خلاف صدائے احتجاج بلند کریں۔
خبر کا کوڈ : 930231
رائے ارسال کرنا
آپ کا نام

آپکا ایمیل ایڈریس
آپکی رائے

منتخب
ہماری پیشکش