0
Sunday 2 May 2021 17:58

احکامات کے ذریعے عزاداری پر پابندی لگانے والے ریاستی ادارے حقائق سے بے خبر ہیں، علامہ اقتدار نقوی 

احکامات کے ذریعے عزاداری پر پابندی لگانے والے ریاستی ادارے حقائق سے بے خبر ہیں، علامہ اقتدار نقوی 
اسلام ٹائمز۔ مجلس وحدت مسلمین پاکستان جنوبی پنجاب کے صوبائی سیکرٹری جنرل علامہ اقتدار نقوی نے پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا ہے کہ عزاداری ہماری عبادت ہے، کوئی بھی مذہب و مسلک کسی کو اپنی عبادت پر پابندی کی اجازت نہیں دے سکتا، حکومت کو ایس او پیز پر عمل درآمد کرانے کا اختیار حاصل ہے، لیکن کسی کے مذہبی معاملات میں خلل ڈالنے کا قطعاً حق حاصل نہیں، ماضی میں دہشت گردی کے ذریعے ہمارے جلوس و مجالس کو روکنے کی کوشش کی گئی۔ ملت تشیع کے ہزاروں افراد کو شہید کرنے کے باوجود عزاداری میں کمی نہیں آئی، جو ریاستی ادارے اپنے احکامات کے ذریعے عزاداری پر پابندی لگانا چاہتے ہیں، وہ حقائق سے بے خبر ہیں۔

اگر حکومت اپنے ضمنی الیکشن کی مہم چلا سکتی ہے، انتخابات ہوسکتے ہیں، بازاروں میں بے ہنگم ہجوم ہوسکتا ہے تو جلوس کیوں نہیں ہوسکتے۔ حکومت یہ بات ذہن نشیں کر لے کہ عزاداری کے حوالے سے شیعہ قوم اپنے اصولی موقف سے ایک قدم بھی پیچھے نہیں ہٹے گی۔ حکومت کے غیر دانشمندانہ فیصلوں سے لگتا ہے کہ ان کا دین سے کوئی تعلق نہیں۔ ملت تشیع ایک مہذب قوم ہے، ہم نے کبھی بھی شائستگی اور تہذیب کا دامن ہاتھ سے نہیں چھوڑا، ملک کے آئین و قانون کی بالادستی کو ہم مقدم سمجھتے ہیں۔ مجالس و جلوس میں بھی ایس او پیز پر عمل درآمد ہماری قانونی، اخلاقی اور شرعی ذمہ داری ہے۔ انہوں نے کہا کہ تبدیلی کا نعرہ لگا کر اقتدار میں آنے والے حکمرانوں نے عوام کو سخت مایوس کیا۔

انہوں نے کہا کہ یوم القدس قریب آرہا ہے۔ اس موقع پر دنیا بھر کے باشعور افراد فلسطینی عوام سے اظہار یکجہتی کے لیے سڑکوں پر نکلتے ہیں۔ حکومت کو چاہیئے کہ وہ لوگ کے لیے آسانیاں پیدا کرے۔ انہوں نے کہا کہ میڈیا پر بھی قدغن لگائی جا رہی ہے۔ الیکٹرانک یا پرنٹ میڈیا پر پابندی لگائی جاتی ہے تو لوگ سوشل میڈیا کو متبادل کے طور پر استعمال کرتے ہیں۔ میڈیا کو اپنی ساکھ کو برقرار رکھنے کے لیے حکومتی کے غیر جمہوری اقدامات کے خلاف آواز بلند کرنی چاہیئے۔ انہوں نے عزاداران سے کہا کہ وہ جلوس و مجالس کے پروگرام میں مکمل ایس او پیز کے ساتھ شرکت کو یقینی بنائیں۔ پریس کانفرنس میں علامہ قاضی نادر حسین علوی، سلیم عباس صدیقی، ندیم عباس کاظمی، فخر نسیم صدیقی بھی شریک تھے۔
خبر کا کوڈ : 930350
رائے ارسال کرنا
آپ کا نام

آپکا ایمیل ایڈریس
آپکی رائے

منتخب
ہماری پیشکش