0
Monday 3 May 2021 16:55

این اے 249 میں شکست، پی ٹی آئی رہنماؤں نے قیادت کے فیصلے پر سنگین سوالات اٹھا دیئے

این اے 249 میں شکست، پی ٹی آئی رہنماؤں نے قیادت کے فیصلے پر سنگین سوالات اٹھا دیئے
اسلام ٹائمز۔ این اے 249 کراچی میں تحریک انصاف کی شکست کے بعد رہنماؤں نے قیادت کے فیصلے پر سنگین سوالات اٹھا دیئے، رکن قومی اسمبلی اسلم خان کے بعد بلدیہ ٹاون سے پی ایس 116 سے منتخب رکن سندھ اسمبلی شہزاد اعوان نے وزیر اعظم، گورنر سندھ اور چیف آرگنائزر سیف اﷲ نیازی کو خط لکھ دیا، جس میں انھوں اپنے شدید تحفظات کا اظہار کیا ہے۔ شہزاد اعوان نے سب سے پہلے تحریک انصاف کے امیدوار امجد آفریدی پر تحفظات کا اظہار کیا تھا کہ یہ امیدوار بہت کمزور ہے، یہ یو سی اور سندھ اسمبلی کی نشست پر ہار چکا ہے، پارٹی کو نقصان ہوگا۔ شہزاد نے خط میں لکھا ہے کہ میں نے پہلے کہا تھا کہ یہ امیدوار مناسب نہیں، میرے خدشات سچ ثابت ہوئے۔ انہوں نے مزید کہا کہ وزیراعظم عمران خان صاحب کے کہنے پر ہم نے ان کی انتخابی مہم چلائی، لیکن مجھ سمیت تمام لوگ بہتر انداز سے مہم نہیں چلا سکے، میں نے وزیراعظم کے حکم پر انتخابی مہم چلائی، لیکن میرے خلاف سوشل میڈیا پر مہم چلائی جا رہی ہے کہ میری وجہ سے ہارے ہیں، این اے 249 کراچی میں شکست کی وجہ جاننے کیلئے کمیٹی تشکیل دی جائے۔

پی ٹی آئی رکن سندھ اسمبلی شہزاد اعوان نے کہا کہ سینئر ممبر پر مشتمل کمیٹی تعین کرے کہ شکست کے عوامل کیا ہیں، مجھ سمیت جن افراد کو جو فرائض سونپے گئے وہ ناکام رہے، فرائض کی غفلت کے باعث ووٹرز کو نکال نہیں سکے۔ خط میں مزید لکھا گیا ہے کہ بلدیہ ٹاؤن میں حکمت عملی کا فقدان تھا اور غلط فیصلوں کی وجہ سے عبرت ناک شکست ہوئی، اس میں جس کی کوتاہی ہو اس کے خلاف کارروائی کی جائے، ہماری جماعت کا مقامی ڈھانجہ مکمل طور پر ناکام ہو چکا ہے۔
خبر کا کوڈ : 930519
رائے ارسال کرنا
آپ کا نام

آپکا ایمیل ایڈریس
آپکی رائے

منتخب
ہماری پیشکش