0
Thursday 13 May 2021 19:26

کراچی میں دوران رمضان ڈاکو راج، مزاحمت پر 6 افراد جان سے گئے

کراچی میں دوران رمضان ڈاکو راج، مزاحمت پر 6 افراد جان سے گئے
اسلام ٹائمز۔ رمضان المبارک کے بابرکت مہینے کے دوران شہر کراچی میں ڈاکو راج عروج پر رہا، رمضان المبارک کے 29 روز میں ڈاکوؤں نے لوٹ مار کے دوران مزاحمت پر ریٹائرڈ خاتون پروفیسر اور پولیس اہلکار سمیت 6 افراد کو زندگی سے محروم کر دیا۔ تفصیلات کے مطابق رمضان المبارک کے بابرکت مہینے میں شہر کراچی کے مختلف علاقوں میں ڈاکوؤں نے لوٹ مار کی آزادانہ وارداتیں کرتے ہوئے پولیس اہلکار سمیت 2 افراد کو قتل اور 23 افراد کو فائرنگ کرکے زخمی کر دیا۔ اعداد و شمار کے مطابق 21 رمضان المبارک بروز منگل 4 مئی کو ڈاکوؤں نے 4 افراد کو مزاحمت پر فائرنگ کرکے زخمی کیا، جس میں شاہ لطیف ٹائون کے علاقے میں 25 سالہ سلیم، درخشاں کے علاقے خیابان قاسم پاور ہاؤس کے قریب شکیل، سچل کے علاقے سکندر گوٹھ میں کریانہ اسٹور پر فائرنگ سے 29 سالہ زین اللہ، جبکہ 18 سالہ زاکر ٹی ٹی کے بٹ سے زخمی کر دیا گیا، جبکہ اسی روز لیاقت آباد کے علاقے بلوچ ہوٹل کے قریب بھی ڈاکوؤں نے لوٹ مار کے دوران مزاحمت پر 40 سالہ سعید کو فائرنگ کر کے زخمی کر دیا۔

5 مئی کو منگھوپیر اجتماع گاہ روڈ پر ڈاکوئوں نے مزاحمت پر 36 اکبر اور پیرآباد کے علاقے میں میانوالی کالونی آصف کولڈ سینٹر پر مزاحمت پر 26 سالہ شیر خان زخمی ہوگیا، جبکہ قائد آباد میں پولیس اور ڈاکوؤں کے درمیان فائرنگ کے تبادلے میں 2 افراد 26 سالہ ضیااللہ اور 22 سالہ محمد سلمان زخمی ہوئے۔ پولیس نے دعویٰ کیا ہے کہ زخمی ہونے والے دونوں افراد ڈاکوئوں کی فائرنگ سے زخمی ہوئے تھے، 6 مئی کو سائٹ سپر ہائی صنعتی ایریا میں ڈاکوؤں کی فائرنگ سے 25 سالہ سیف اللہ، جبکہ نیو کراچی الیون جی میں ڈاکوؤں کی فائرنگ سے حمزہ نامی نوجوان زخمی ہوگیا۔ نیو کراچی صنعتی ایریا کے علاقے میں ڈاکوؤں کی فائرنگ سے پولیس اہلکار سلیم زخمی ہوگیا، تاہم پولیس نے مقابلے کے دوران ڈاکو کو زخمی حالت میں گرفتار کرلیا، جبکہ اسی روز اسٹیل ٹاؤن کے علاقے گلشن حدید میں ڈاکوؤں نے لوٹ مار کے دوران مزاحمت پر نوعمر لڑکے سمیت 4 افراد کو زخمی کر دیا، جس میں 12 سالہ عبداللہ، 35 سالہ طاہر اور 30 سالہ بلال کے علاوہ ایک نامعلوم بھی شامل تھا، جبکہ جمعرات کی رات بغدادی کے علاقے ماما ہوٹل گلی نمبر 2 شہزادہ خان منزل کے قریب مزاحمت پر ڈاکوئوں کی فائرنگ سے پولیس اہلکار معیز شہید ہوگیا، جبکہ فائرنگ سے 6 سالہ ابوبکر اور 18 سالہ جہانزیب زخمی ہوگیا۔ مقتول پولیس اہلکار ایس پی سٹی کا ڈرائیور تھا۔

7 مئی اقبال مارکیٹ کے علاقے اورنگی ٹائون سیکٹر ساڑھے گیارہ میں ڈاکوؤں نے مزاحمت پر 35 سالہ ناصر کو فائرنگ کرکے زخمی کر دیا، 8 مئی کو شاہ لطیف ٹاؤن ڈاکوؤں کی فائرنگ سے 22 سالہ اسامہ، پاک کالونی میں آصف خان، جبکہ اتحاد ٹاؤن میں ڈاکوؤں کی فائرنگ سے 40 سالہ بسم اللہ زخمی ہوگیا۔ 9 مئی کو زمان ٹائون غوث پاک روڈ پر میڈیکل اسٹور میں ڈکیتی کے دوران مزاحمت پر دکان کا مالک 40 سالہ عمران ڈاکوؤں کی فائرنگ سے زندگی کی بازی ہار گیا، جبکہ رات گئے اقبال مارکیٹ کے علاقے بلاک ایل اورنگی ٹاؤن میں ڈاکوؤں نے مزاحمت پر 53 سالہ تنویر کو فائرنگ کرکے زخمی کر دیا۔

11 مئی بروز منگل لانڈھی کربلا گراؤنڈ کے قریب موٹر سائیکل سوار ڈاکوؤں نے لوٹ مار کے دوران مزاحمت پر 4 نوجوانوں کو فائرنگ کرکے زخمی کر دیا، جس میں 18 سالہ شاہزیب، 19 فہد، 17 سالہ ضیغم اور 18 سالہ سمیع شامل ہیں، 12 مئی کو زمان ٹاؤن کے علاقے بھٹائی کالونی میں ڈاکوؤں نے لوٹ مار کے دوران 28 سالہ راحیل کو، کورنگی چمڑا چورنگی کے قریب ڈاکوئوں نے مزاحمت پر 30 سالہ ساجد کو، جبکہ اسی روز ڈاکس کے علاقے نیٹی جیٹی پل کے قریب بھی ڈاکوؤں نے مزاحمت پر 22 سالہ محمد شیر کو فائرنگ کرکے زخمی کر دیا۔ رمضان کے مقدس مہینے میں ڈاکوؤں کی آزادانہ لوٹ مار نے کراچی پولیس کے دعوؤں اور سیکیورٹی اقدامات کی قلعی کھول دی ہے۔
خبر کا کوڈ : 932410
رائے ارسال کرنا
آپ کا نام

آپکا ایمیل ایڈریس
آپکی رائے

منتخب
ہماری پیشکش