0
Sunday 18 Jul 2021 21:54

اربوں روپے کے فراڈ میں ملوث تھری اے الائنس کا ڈائریکٹر گرفتار

اربوں روپے کے فراڈ میں ملوث تھری اے الائنس کا ڈائریکٹر گرفتار
اسلام ٹائمز۔ قومی احتساب بیورو (نیب) بلوچستان کی جاری کردہ پریس ریلیز کے مطابق قومی احتساب بیورو بلوچستان نے تھری اے الائنس کیس میں اہم پیشرفت کرتے ہوئے جعلی کمپنی کے ڈائریکٹر سید میر کو کوئٹہ سے گرفتار کر لیا ہے۔ ملزم سینکڑوں لوگوں سے منافع کے جھانسے پر بھاری رقم وصول کرکے روپوش تھا۔ ڈی جی نیب بلوچستان کی ہدایات پر مرکزی ملزم کاشف قمر کی گرفتاری کے لئے کوششیں جاری ہیں۔ ملزم کا ریمانڈ حاصل کرکے مزید تفتیش شروع کر دی گئی ہے۔ واضح رہے کہ نیب کو ملنے والی شکایات اور ابتدائی چھان بین سے پتہ چلا کہ 3A الائنس نامی کمپنی نے کوئٹہ سمیت اندرونِ بلوچستان اور سندھ کے چند شہروں میں اپنے دفاتر بنا کر عوام سے اربوں روپے سرمایہ کاری کی مد میں وصول کئے۔ سرمایہ کاری کرنے والوں کو کچھ عرصہ منافع کی رقم بھی ملتی رہی، لیکن ملزمان اچانک تمام دفاتر بند کرکے روپوش ہوگئے۔

عوام الناس کی جانب سے شکایات موصول ہونے پر ڈی جی نیب بلوچستان نے تحقیقاتی ٹیم تشکیل دیتے ہوئے تھری الائنس کمپنی کے خلاف فوری تحقیقات کا حکم دیا تھا۔ نیب بلوچستان انٹیلی جینس ٹیم کی مسلسل نگرانی کے بعد کیس میں مطلوب ملزمان ندیم جگا، احمد جان، جلات خان، شادی خان اور شاہد گل کو گرفتار کیا گیا، جبکہ کیس کا دائرہ کار بڑھاتے ہوئے آج جعلساز کمپنی کے ڈائریکٹر کو بھی گرفتار کر لیا گیا ہے۔ یاد رہے کہ عوام الناس سے فراڈ کیس میں مرکزی ملزم کاشف قمر سمیت 25 افراد کے خلاف تقریباً 7 ارب روپے فراڈ کا ریفرنس بھی احتساب عدالت کوئٹہ میں دائر کیا جا چکا ہے۔ کیس کا مرکزی ملزم کاشف قمر تاحال روپوش ہے، تاہم مرکزی ملزم کی جلد از جلد گرفتاری کے لئے کوششیں جاری ہیں۔
خبر کا کوڈ : 944112
رائے ارسال کرنا
آپ کا نام

آپکا ایمیل ایڈریس
آپکی رائے

منتخب
ہماری پیشکش