0
Saturday 31 Jul 2021 13:15

طلسمِ سامری نے امت مسلمہ کا حقیقی جوہر ختم کر دیا ہے، حافظ محمد ادریس

طلسمِ سامری نے امت مسلمہ کا حقیقی جوہر ختم کر دیا ہے، حافظ محمد ادریس
اسلام ٹائمز۔ جماعت اسلامی پاکستان کے مرکزی رہنماء حافظ محمد ادریس نے منصورہ میں مرکزی کارکنان کے ہفت روزہ درس قرآن کے موقع پر خطاب کرتے ہوئے کہا ہے کہ ایک فرد ہو یا قوم، اللہ کی نعمتوں پر شکر گزاری اور ابتلا و آزمائش میں صبر اور راضی برضا رہنا ایمان کا تقاضا ہے۔ اللہ نے ہمارے ملک و قوم کو بے انتہاء نعمتوں سے نوازا ہے، مگر ہم اللہ کے شکر گزار بندے نہ بن سکے۔ انہوں نے کہا کہ ہمارے وسائل مسلسل قارون صفت عناصر نے ہڑپ کیے اور ہمارے عوام ان سے اپنے حقوق واپس لینے کی بجائے انہی کے جال میں بار بار اپنی گردن ڈال کر غلامی کی ذلت قبول کرتے رہے۔ فرعون و قارون اللہ کے باغی تھے، مگر وہ محض دو افراد نہیں، بلکہ کردار تھے۔ یہ کردار ہر دور میں نام بدل بدل کر مخلوق خدا پر مسلط ہوا کرتے ہیں۔ ان کا انجام عبرتناک ہوگا، مگر اللہ کی اپنی حکمت ہے کہ وہ رسی دراز کرتا رہتا ہے۔

انہوں نے کہا کہ جس نبی پاک کا ہم کلمہ پڑھتے ہیں، ان کا حکم تو یہ ہے کہ دنیا کی دولت اور نعمتوں کے متعلق اپنے سے نیچے والوں کو دیکھو اور شکر کرو، دین کے معاملے میں اپنے سے اوپر والوں کو دیکھو اور ان جیسا بننے کی کوشش کرو۔ بندہ مومن فرعون، ہامان اور قارون کی غلامی قبول نہیں کرسکتا، اسے جدوجہد کرکے ان طاغوتی قوتوں کو ملیا میٹ کرنے کا حکم ہے۔ افسوس ہے کہ آج طلسم سامری نے امت مسلمہ کا حقیقی جوہر ختم کر دیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ دروس قرآن کا مقصد انفرادی زندگی سے لے کر اجتماعی معاملات اور معاشر ے و حکومت کی اصلاح ہے، قرآن کے اس پیغام کو عام کرنا جہاد ہے۔
خبر کا کوڈ : 946051
رائے ارسال کرنا
آپ کا نام

آپکا ایمیل ایڈریس
آپکی رائے

منتخب
ہماری پیشکش