0
Wednesday 27 Oct 2021 22:57

پیگاسس پر ہماری بات درست ثابت ہوئی، راہل گاندھی

پیگاسس پر ہماری بات درست ثابت ہوئی، راہل گاندھی
اسلام ٹائمز۔ پیگاسس کیس کی سماعت اور تحقیقات کے لئے ایک کمیٹی قائم کرنے کے سپریم کورٹ کے حکم پر مودی حکومت کو ہدف تنقید بناتے ہوئے کانگریس کے سابق صدر راہل گاندھی نے کہا کہ عدالت عظمٰی نے ہماری بات پر مہر لگائی ہے اور ہماری پارٹی پھر سے اس معاملے کو پارلیمنٹ میں اٹھائے گی۔ راہل گاندھی نے کہا کہ وزیر اعظم مودی ملک سے اوپر نہیں ہیں۔ راہل گاندھی نے الزام لگایا کہ پیگاسس کے ذریعہ قومی اداروں پر حملہ کیا گیا ہے۔ الیکشن کمیشن، پارلیمنٹ، وزیراعلیٰ، اپوزیشن لیڈر، سیاستدانوں اور صحافیوں کی جاسوسی کی کوشش کی گئی۔ انہوں نے کہا کہ حکومت واضح کرنا چاہیئے کہ پیگاسس کس کے خلاف استعمال کیا گیا۔ راہل گاندھی نے کہا کہ وہ اس مسئلے کو بار بار اٹھا رہے ہیں اور یہ جمہوریت کے لئے تشویشناک ہے۔ قومی سلامتی کے نام پر چیزیں اور حقائق چھپائے نہیں جا سکتے۔

انہوں نے کہا کہ ایسے الزامات سامنے آئے ہیں کہ حکومت پیگاسس جاسوس سافٹ ویئر کے ذریعے اہم لوگوں کی جاسوسی کر رہی ہے۔ حکومت سامنے آنا چاہیئے اور بتانا چاہیئے کہ کیا پیگاسس خریدا گیا، کس نے آرڈر دیا اور اس کا استعمال کہاں کہا اور کس کس کے خلاف ہوا۔ غور طلب ہے کہ سپریم کورٹ نے بدھ کو مودی حکومت کے رویہ پر برہمی کا اظہار کرتے ہوئے کہا تھا کہ قومی سلامتی کے نام پر سب کچھ چھپایا نہیں جا سکتا۔ سپریم کورٹ نے سپریم کورٹ کے ایک سابق جج کی نگرانی میں ایک کمیٹی تشکیل دی ہے اور اس کے ساتھ ٹیکنیکل امور کے ماہرین کی ایک کمیٹی سے بھی کہا کہ وہ اس پورے معاملے پر اپنی رائے دے۔
خبر کا کوڈ : 960712
رائے ارسال کرنا
آپ کا نام

آپکا ایمیل ایڈریس
آپکی رائے

ہماری پیشکش