0
Monday 22 Nov 2021 10:51

رہائی کے بعد سعد رضوی کا پہلا عوامی خطاب

رہائی کے بعد سعد رضوی کا پہلا عوامی خطاب
اسلام ٹائمز۔ تحریک لبیک پاکستان (ٹی ایل پی) کے سربراہ حافظ سعد رضوی نے اعلان کیا ہے کہ وہ اپنی جان دے دیں گے لیکن کسی ظالم کے سامنے ہتھیار نہیں ڈالیں گے اور عوام سے اگلے عام انتخابات میں ان کی تنظیم کو ووٹ دینے کی اپیل کی ہے۔ ذرائع کے مطابق "شہدا ناموس رسالت کانفرنس" کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے جو لوگ واقعات کے موڑ پر حیران تھے وہ نہیں جانتے تھے کہ جنگ کس نے جیتی ہے۔ اس موقع پر ٹی ایل پی کے سربراہ نے کہا کہ ہماری ماؤں، مُردوں اور زخمیوں نے میدان جیت لیا ہے کیونکہ وہ اپنی جان و مال کی قربانی دیتے ہوئے پیچھے نہیں ہٹے۔ انہوں نے کہا کہ ان کے حامیوں نے دنیا کو دکھایا ہے کہ وہ پیچھے نہیں ہٹیں گے اور ان کی ماؤں نے بزدلوں کو جنم نہیں دیا، اب میرے ساتھی پوچھ رہے ہیں کہ انہیں 2023ء کے انتخابات میں اپنے پیاروں اور جائیدادوں کی قربانی دینے کے بعد کیا کرنا پڑے گا۔ انہوں نے کہا کہ ان کے تمام ساتھی اور حامی نبی اکرم صلی اللہ علیہ وسلم کی عزت و تکریم کے لیے کھڑے ہیں کیونکہ قوم ان کی ختم نبوت کے تحفظ کے لیے ان پر اعتماد کرتی ہے اور اب میں قوم سے مطالبہ کرتا ہوں کہ آئندہ انتخابات میں ان کے بیلٹ بکس خالی نہ رہیں۔ صوبائی محکمہ داخلہ کی جانب سے جاری مراسلے میں کہا گیا تھا کہ حافظ محمد سعد ولد خادم حسین کا نام انسداد دہشت گردی ایکٹ 1997ء کی فورتھ شیڈول کی فہرست سے خارج کر دیا گیا ہے۔

سعد رضوی نے مرکزی رویت ہلال کمیٹی کے سابق چیئرمین مفتی منیب الرحمن اور دیگر تمام افراد کا شکریہ ادا کیا جنہوں نے حکومت کے ساتھ معاہدے کو آسان بنانے میں کردار ادا کیا۔ انہوں نے اپنے والد کے عرس کی اختتامی تقریب میں شریک لوگوں سے پہلے مفتی منیب الرحمٰن کو عملی طور پر سلام کیا۔ انہوں نے کہا کہ وہ اپنی جدوجہد جاری رکھیں، جن لوگوں کا کوئی نظریہ نہیں ہے وہ بیکار ہیں اور یہ ایسا ہی ہو گا کہ ایک کمزور قوم کے پاس ایٹمی بم رکھنے کا کوئی فائدہ نہیں ہو گا۔ سعد رضوی نے اعلان کیا کہ ان کی تنظیم نے کئی لوگوں کی جانیں قربان کرنے کے بعد بھی کچھ نہیں کھویا اور اگر کوئی انہیں چیلنج کرنے کی ہمت کرے تو وہ دوبارہ ایسا کرنے کو تیار ہیں۔ کانفرنس سے ٹی ایل پی کے نائب امیر پیر سید ظہیر الحسن شاہ اور اس کے مرکزی ایگزیکٹو ممبران ڈاکٹر محمد شفیق امینی اور مفتی عمیر الزہروی نے بھی خطاب کیا۔ خیال رہے کہ 18 نومبر کو ٹی ایل پی کے سربراہ سعدحسین رضوی کو کوٹ لکھپت جیل سے رہا کردیا گیا تھا۔
خبر کا کوڈ : 964783
رائے ارسال کرنا
آپ کا نام

آپکا ایمیل ایڈریس
آپکی رائے

منتخب
ہماری پیشکش