0
Wednesday 12 Jan 2022 23:44

حکمرانوں نے اعتراف کر لیا کہ وہ امریکا کے غلام ہیں، سراج الحق

حکمرانوں نے اعتراف کر لیا کہ وہ امریکا کے غلام ہیں، سراج الحق
اسلام ٹائمز۔ امیر جماعت اسلامی سراج الحق نے کہا ہے کہ سونامی صرف دعوں اور اعلانات کا طوفان تھا، جو ملک کی تباہی کرچکا۔ بلدیاتی الیکشن میں ہی پی ٹی آئی کا صفایا ہو جائے گا، حکومت بھاگنے کی کوششیں نہ کرے۔ عوام ناانصافی اور ظلم پر مزید خاموش نہیں رہیں گے۔ موجودہ کے ساتھ ساتھ سابقہ حکمرانوں کو بھی اپنے کیے کا جواب دہ ہونا ہوگا۔ پی ٹی آئی، ن لیگ اور پی پی جاگیرداروں، سرمایہ داروں اور وڈیروں کی پارٹیاں ہیں۔ بھائی، بہن، ماموں، بھانجے، باپ، بیٹے کی موروثی سیاست کا وقت ختم ہو گیا۔ قوم جاگ چکی اور ملک میں اسلام کا نظام چاہتی ہے۔ منی بجٹ نامنظور، بھرپور احتجاج کریں گے۔ مہنگائی کا سونامی بے قابو، حکومتی رٹ کہیں دکھائی نہیں دے رہی۔ مری میں انسان سردی میں مرتے رہے اور پنجا ب حکومت اور اس کی مشینری خواب خرگوش کے مزے لیتی رہی۔ حکمرانوں نے اعتراف کر لیا کہ وہ امریکا کے غلام ہیں۔ استعمار کی غلامی کرنے والوں کو اسلامی اور ایٹمی پاکستان پر حکومت کا کوئی حق نہیں۔

 سراج الحق نے کہا کہ ورلڈ بنک اور آئی ایم ایف نے ہی معیشت چلانی ہے تو ایوانوں میں بیٹھے حکمران کیا کر رہے ہیں؟ حکومت جواب دے اربوں ڈالرز کا قرضہ کہاں گیا۔ عوام کے خون پسینے کی کمائی حکمرانوں کی عیاشیوں اور سود بھرنے کے لیے نہیں ہے۔ لوگ اب اس قابل بھی نہیں رہے کہ گھر کا خرچہ چلا سکیں۔ آئی ایم ایف اور اس کے تابعداروں کو خیرباد کہنے کا وقت آ گیا۔ آٹا، چینی، دالوں، ادویات کی قیمتوں میں پچھلے ساڑھے تین برسوں میں ساڑھے تین سو فیصد سے زیادہ اضافہ ہوا۔ بے روزگاری کا طوفان بے قابو ہے، لاکھوں نوجوان ڈگریاں اٹھائے رل گئے۔ ملک کے مسائل کا حل نظام مصطفی ہے۔ ان خیالات کا اظہار انھوں نے تیمرگرہ دیرپائن میں بلدیاتی کنونشن سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔

سراج الحق نے کہا کہ کے پی میں بلدیاتی الیکشن کے اگلے مرحلے میں پی ٹی آئی کو مزید خفت کا سامنا کرنا پڑے گا۔ صوبے کی عوام آٹھ برسوں سے مسلط پی ٹی آئی کو خیرباد کہنے کے لیے تیار بیٹھے ہیں۔ کے پی میں صحت اور تعلیم کا انقلاب لانے کے دعویدار زمینی حقائق دیکھیں۔ لوگوں پر عرصہء حیات تنگ ہو چکا ہے۔ معیشت آئی ایم ایف کے کنٹرول میں اور خارجہ پالیسی امریکا کے کہنے پر تشکیل دی جا رہی ہے۔ پاکستان کو اسلام کی سرزمین بننا تھا، مگر یہاں مغرب اور اس کے حواریوں کا سکہ چل رہا ہے۔ 74برسوں سے قوم پر مسلط جاگیرداروں اور مافیاز کو گھر کا راستہ دکھائے بغیر ملک آگے نہیں بڑھ سکتا۔ پہلے ن لیگ، پی پی اور فوجی ڈکٹیٹروں نے عوام کہ سہانے خواب دکھائے، مگر ملک کے اداروں اور معیشت کو تباہ کیا، اب پی ٹی آئی جھوٹ پر جھوٹ بول رہی ہے۔ وزیراعظم حساب دیں کہ ساڑھے تین برسوں میں عوام کی فلاح کے لیے کیا کام کیا؟ اسلامی نظریاتی پاکستان کے خلاف سازشیں ہو رہی ہیں، منی بجٹ مسلط کیا جا رہا ہے۔ مدینہ کی ریاست کا نام لینے والوں نے سودی معیشت کو بڑھاوا دیا۔

 
خبر کا کوڈ : 973286
رائے ارسال کرنا
آپ کا نام

آپکا ایمیل ایڈریس
آپکی رائے

منتخب
ہماری پیشکش