0
Monday 17 Jan 2022 19:27

حکومت نے کشمیر پریس کلب کے احاطے کی الاٹمنٹ منسوخ کر دی

حکومت نے کشمیر پریس کلب کے احاطے کی الاٹمنٹ منسوخ کر دی
اسلام ٹائمز۔ کشمیر پریس کلب میں جاری تنازعے کے پیشِ نظر جموں و کشمیر کی حکومت نے آج پریس کلب کے احاطے کی الاٹمنٹ کو منسوخ کر دیا ہے۔ حکومت کا کہنا ہے کہ امن و امان کو برقرار رکھنے اور میڈیا افراد کی حفاظت پر تشویش ہے اس لئے حکومت نے یہ فیصلہ لیا ہے۔ حکومت کی جانب سے جاری ایک تحریری بیان میں کہا گیا ہے کہ حریف گروپ ایک ایسے وقت میں آپس میں لڑ پڑے ہیں جب کشمیر پریس کلب کا وجود سینٹرل سوسائٹی آف رجسٹریشن ایکٹ کے تحت رجسٹرڈ باڈی کے طور پر ختم ہوگیا ہے اور اس کی منیجنگ باڈی کی مدت بھی 14 جولائی 2021ء کو ختم ہوگئی تھی۔ وہیں رجسٹریشن کا عمل بھی باقاعدہ نہیں ہے۔ حکومت کا خیال ہے کہ جاری تنازعے سے صورتحال مزید خراب ہوسکتی ہے اور اس کے ممکنہ حفاظتی جہتیں ہیں جیسا کہ انٹیلی جنس معلومات اور پاکستانی حمایت یافتہ دہشت گردوں کی ماضی کی تاریخ سے اس طرح کے حالات کو اپنے فائدے کے لئے استعمال کیا جا سکتا ہے۔
 
بیان میں مزید کہا گیا کہ حکومت آزاد اور منصفانہ پریس کے لئے پرعزم ہے اور اس کا خیال ہے کہ صحافی پیشہ ورانہ، تعلیمی، سماجی، ثقافتی، تفریحی اور فلاحی سرگرمیوں کے لئے جگہ سمیت تمام سہولیات کے حقدار ہیں تاہم ناخوشگوار پیشرفت کے پیش نظر مختلف رپورٹس کا نوٹس لیتے ہوئے مداخلت کا فیصلہ کیا ہے۔ حکومت کا کہنا ہے کہ صحافیوں کی فلاح و بہبود کے لیے کشمیر پریس کلب کو الاٹ کی گئی اراضی اور عمارت کا کنٹرول فی الوقت اسٹیٹ ڈیپارٹمنٹ کے پاس رکھا جائے۔ محکمہ اطلاعات اس بات کو یقینی بنائے گا کہ صحافیوں کو جاری سہولیات سے استفادہ جاری رہے۔
خبر کا کوڈ : 974071
رائے ارسال کرنا
آپ کا نام

آپکا ایمیل ایڈریس
آپکی رائے

منتخب
ہماری پیشکش