0
Monday 24 Jan 2022 09:53

بی جے پی کے علاوہ باقی کسی بھی پارٹی سے اتحاد ممکن ہے، پرینکا گاندھی

بی جے پی کے علاوہ باقی کسی بھی پارٹی سے اتحاد ممکن ہے، پرینکا گاندھی
اسلام ٹائمز۔ پرینکا گاندھی نے کہا کہ کانگریس دیگر کسی بھی پارٹی یا اتحاد کا حصہ بن سکتی ہے، خود بھی الیکشن لڑنے کا اشارہ دیا لیکن بی جے پی لیڈر یوگی آدتی ناتھ کے خلاف اُترنے کو خارج از امکان قرار دیا۔ کانگریس کی اترپردیش کی انچارج پرینکا گاندھی نے کہا ہے کہ بی جے پی چھوڑ باقی کسی بھی پارٹی سے کانگریس کا اتحاد ممکن ہے۔ ان کا کہنا ہے کہ بی جے پی کے لئے دروازے بند ہوچکے ہیں تاہم باقی پارٹیوں کے لئے ابھی بھی کھلے ہیں۔ انہوں نے یہ اشارہ بھی دیا ہے کہ مابعد انتخابات حسب ضرورت حکومت سازی کیلئے کانگریس غیر بی جے پی پارٹی یا اتحاد کو حمایت دے سکتی ہے اور سرکار میں حصہ دار بھی بن سکتی ہے۔ کانگریس لیڈر نے خود بھی الیکشن لڑنے کا اشارہ دیا ہے تاہم یوگی کے خلاف میدان میں اُترنے کے قیاس کو خارج از امکان قرار دیا ہے۔

اترپردیش میں کانگریس کو پھر سے نمایاں سیاسی طاقت بنانے کیلئے جد و جہد کررہیں پرینکا گاندھی نے اشارہ دیا ہے کہ مابعد انتخابات کانگریس غیر بی جے پی پارٹی یا اتحاد کے ساتھ مل کر نئی حکومت کا حصہ بن سکتی ہے۔ نیوز ایجنسی ’اے این آئی‘ کو دیئے گئے ایک انٹرویو میں کانگریس کی یوپی انچارج نے کہا کہ بی جے پی کیلئے اتحاد کا دروازہ بند ہوچکا ہے، کیونکہ ہماری پالیسی، نظریات اور اصول اس پارٹی سے بالکل میل نہیں کھاتے لیکن دیگر پارٹیوں کیلئے دروازے ابھی بھی کھلے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ جب ضرورت پڑے گی تب اس کا حتمی فیصلہ کیا جائے گا، مگر یہ الائنس اسی پارٹی یا اتحاد سے ممکن ہے جو خواتین اور نوجوانوں کیلئے ہماری پالیسی پر کام کرنے کیلئے راضی ہوگا۔ کانگریس کی جنرل سیکریٹری نے یہ بھی اشارہ دیا ہے کہ وہ کسی اسمبلی حلقہ سے انتخابی دنگل میں اتر سکتی ہیں مگر یہ گورکھپور صدر حلقہ نہیں ہوگا جہاں سے وزیراعلٰی یوگی آدتیہ ناتھ کو بی جے پی نے امیدوار بنایا ہے۔ انہوں نے یوگی کے خلاف لڑنے کے قیاس کو صاف طور پر مسترد کردیا ہے۔

کانگریس جنرل سیکریٹری کا کہنا ہے کہ کانگریس واحد پارٹی ہے جو مسلسل عوامی ایشوز کو اٹھاتی رہی ہے، سڑک سے ایوانوں تک ہم نے یہ لڑائی لڑی ہے اور آگے بھی یہ لڑائی جاری رہے گی۔ انہوں نے کہا کہ بے روزگاری، بڑھتی ہوئی مہنگائی، ریاست کے حالات اور کسانوں کی حالت یہ چار اہم ایشوز ہیں جن کے خلاف کانگریس مسلسل لڑرہی ہے، باقی کوئی بھی اپوزیشن پارٹی نظر نہیں آئی۔ اس لئے جب تک یہ مسائل حل نہیں ہو جاتے ہماری لڑائی، جدوجہد  جاری رہے گی۔ پرینکا گاندھی نے بی جے پی اور سماجوادی پارٹی کو تقریباً ایک جیسا بتاتے ہوئے کہا کہ ان کی پالیسیوں میں زیادہ فرق دکھائی نہیں پڑتا۔ قابل ذکر ہے کہ کانگریس کے بیشتر لیڈران کہتے رہے ہیں کہ پرینکا ہی ان کی پارٹی کی جانب سے وزیر اعلیٰ کا چہرہ ہیں تاہم پارٹی نے اس طرح کا ابھی تک کوئی اعلان نہیں کیا ہے۔ یوپی الیکشن کی کمان پوری طرح پرینکا گاندھی کے ہی ہاتھوں میں ہے اور امیدوارہوں یا عہدیداران تمام فیصلے وہی کررہی ہیں۔ پرینکا گاندھی نے خواتین اور نوجوانوں پر بطور خاص فوکس کیا ہے، دونوں کیلئے الگ الگ منشور بھی جاری کیا ہے۔
خبر کا کوڈ : 975278
رائے ارسال کرنا
آپ کا نام

آپکا ایمیل ایڈریس
آپکی رائے

منتخب
ہماری پیشکش