0
Saturday 30 Mar 2024 20:42

مختار انصاری کو جیل میں زہر دیا گیا جسکے پختہ ثبوت ہمارے پاس ہیں، افضال انصاری

مختار انصاری کو جیل میں زہر دیا گیا جسکے پختہ ثبوت ہمارے پاس ہیں، افضال انصاری
اسلام ٹائمز۔ مختار انصاری کی جیل میں موت کو لے کر کئی طرح کے سوال اٹھ رہے ہیں۔ پوسٹ مارٹم رپورٹ میں ان کی موت کی وجہ دل کا دورہ پڑنا بتائی جا رہی ہے، لیکن اہل خانہ اس موت کے پیچھے کسی سازش کا اندیشہ ظاہر کر رہے ہیں۔ اب مختار انصاری کے بھائی افضال انصاری کا ایک بڑا بیان سامنے آیا ہے جس میں انہوں نے الزام عائد کیا ہے کہ انہیں زہر دیا گیا جس سے ان کی موت ہوئی۔ مختار انصاری کی موت کے بعد یہ افضال انصاری کا پہلا ردعمل ہے۔ انہوں نے کہا ’’وقت آئے گا تو ہمارے پاس یہ بتانے کے لئے پختہ ثبوت ہے کہ ان کو زہر دے کر مارا گیا ہے‘‘۔ افضال انصاری نے اپنے بھائی کی موت پر سوال اٹھاتے ہوئے کہا کہ ایک بار ذمہ داران سے پوچھ لیجئے گا کہ 26 تاریخ کو انہیں میڈیکل کالج کیوں بھیجا گیا تھا۔ افضال انصاری کہتے ہیں کہ جب ان کی طبیعت بگڑی تھی تو کسی طرح ان سے 5 منٹ کی ملاقات کا موقع ملا تھا۔ ہم نے گزارش کی تھی کہ اگر آپ ان کی طبیعت بہتر کرنا چاہتے ہیں تو ان کو وقت رہتے کہیں دوسری جگہ ریفر کر دیجئے لیکن انہوں نے کہا کہ ہم تین چار دن میں ان کو بہتر کر دیں گے۔

افضال انصاری کا یہ بھی کہنا ہے کہ جب وہ مختار انصاری سے ملنے گئے تھے تو ان کے اندر بالکل بھی طاقت نہیں تھی، لیکن اس ملاقات کے دو گھنٹے بعد ہی ڈاکٹروں نے کہا کہ وہ فِٹ ہیں۔ افضال انصاری نے سوال اٹھایا کہ جو شخص نہ پلنگ پر بیٹھ سکتا تھا، نہ کچھ کر سکتا تھا، اس کو 11 گھنٹے بعد ہی کیسی پوری طرح صحت مند بتا دیا گیا۔ افضال نے اس پورے معاملے کو ایک ڈرامہ قرار دیا اور کہا کہ جہاں ایک طرف ڈاکٹروں نے کہا کہ وہ فِٹ ہیں، وہیں مختار نے جب اپنے بیٹے سے بات کی تھی تو انھوں نے اسی درد بھری آواز میں کہا تھا کہ میرا جسم میرا ساتھ چھوڑ رہا ہے۔ اس سے قبل مختار انصاری کے بیٹے عمر انصاری نے ایک انٹرویو کے دوران کہا تھا کہ ہمیں شبہ نہیں بلکہ یقین ہے کہ یہ فطری موت نہیں، منصوبہ بند قتل ہے۔ انہوں نے اس پورے معاملے کی جانچ کا مطالبہ کرنے کا عزم بھی ظاہر کیا تھا۔
خبر کا کوڈ : 1125902
رائے ارسال کرنا
آپ کا نام

آپکا ایمیل ایڈریس
آپکی رائے

منتخب
ہماری پیشکش