0
Thursday 2 Aug 2012 04:29

حزب اللہ مضبوط ہے اور اسرائیلی جارحیت کا منہ توڑ جواب دے گی، ڈاکٹر احمد ملی

حزب اللہ مضبوط ہے اور اسرائیلی جارحیت کا منہ توڑ جواب دے گی، ڈاکٹر احمد ملی
اسلام ٹائمز۔ اسرائیل کا وجود انسانیت کے لیے خطرہ ہے، بیت المقدس صہیونیوں کے ہاتھوں میں ہے اور مسلمان بے بس ہیں، اقوام متحدہ کا کردار مجرمانہ ہے، ہم پاکستان سے بہت محبت کرتے ہیں اور پاکستان حکومت وہ پہلی حکومت ہے کہ جس نے حزب اللہ لبنان کے قائد شہید عباس موسوی کی شہادت پر سنہ 1992ء میں سب سے پہلے حزب اللہ کو تعزیت پیش کی اور اسرائیلی دہشت گردی کی شدید مذمت کی۔ ان خیالات کا اظہار حزب اللہ لبنان کے سیاسی شعبہ کے سربراہ ڈاکٹر احمد ملی، انچارج القدس ایسوسی ایشن لبنان ڈاکٹر حیدر دقماق نے فلسطین فاؤنڈیشن پاکستان کی دعوت پر کراچی پریس کلب میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا، اس موقع پر فلسطین فاؤنڈیشن پاکستان کی مرکزی سرپرست کمیٹی کے اراکین علامہ قاضی احمد نورانی، محفوظ یار خان اور فلسطین فاؤنڈیشن پاکستان کے مرکزی ترجمان صابر کربلائی موجود تھے۔

حزب اللہ لبنان کے سیاسی شعبہ کے سربراہ ڈاکٹر احمد ملی کا کہنا تھا کہ اسرائیل کے اندر رہنے والے لوگ اپنی زندگیوں کو غیر محفوظ سمجھتے ہیں، ان کا کہنا تھا کہ اگر پاکستان، ایران، مصر، لبنان سمیت دیگر مسلم ممالک متحد ہو کر اسرائیل کے خلاف جدوجہد کریں تو اسرائیل کا وجود صفحہ ہستی سے نابود ہو جائے گا۔ ایک سوال کے جواب میں ڈاکٹر احمد ملی کا کہنا تھا کہ سوال یہ نہیں کہ اسرائیل 1967ء کی سرحدوں پر واپس جائے یا کہیں اور جائے، بلکہ اسرائیل نام کی کسی چیز کو ہم نہیں مانتے اور مصر اور اردن کی جانب سے ہونے والے معاہدوں سمیت دنیا بھر کے اسرائیل کے ساتھ کسی بھی معاہدے کو ہم نہیں مانتے، ایک اور سوال کے جواب میں ان کا کہنا تھا کہ معاہدوں کے بعد اسرائیل نے ان معاہدوں پر کس حد تک عمل کیا ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ آج تک اسرائیل کے ساتھ ہونے والے معاہدوں میں اسرائیل نے کسی ایک معاہدے پر بھی عمل نہیں کیا بلکہ فلسطینیوں پر ظلم و بربریت کو اور زیادہ کر دیا ہے۔

انچارج القدس ایسوسی ایشن ڈاکٹر احمد دقماق کا کہنا تھا کہ اسرائیل افواج نے مسجد اقصٰی کی حدود میں 3 ہزار مسلمانوں کے گھروں کو مسمار کیا اور 5 ہزار سالہ ہیکل سلیمانی کا جشن منانے کی تیاریاں کی جا رہی ہیں، آج القدس میں مسلمانوں کا قتل عام جاری ہے اور مسجد اقصٰی کو کھوکھلا کیا جا رہا ہے، تاکہ وہاں ہیکل سلیمانی کی تعمیر کی جائے، حزب اللہ مضبوط ہے اور ٹیکنالوجی کے میدان میں اسرائیلی جارحیت کا منہ توڑ جواب دے گی، جس طرح ممکن ہو اپنے فلسطینی بھائیوں کی مدد کی جائے، افسوس سے کہنا پڑ رہا ہے کہ مسئلہ فلسطین میں عرب ممالک کا کردار بھی مشکوک رہا ہے، ہمیں ایک امت واحدہ کی طرح اس اہم مسئلہ جو انسانیت کا مسئلہ ہے، پر اپنا کردار ادا کرنا چاہیے اور مظلوم فلسطینی بھائیوں کی ہر ممکن مدد کرنا چاہیے۔ آخر میں ڈاکٹر احمد ملی اور حیدر دقماق اور فلسطین فاؤنڈیشن پاکستان کے ترجمان صابر کر بلائی نے صحافی حضرات کا شکریہ ادا کیا۔
خبر کا کوڈ : 184210
رائے ارسال کرنا
آپ کا نام

آپکا ایمیل ایڈریس
آپکی رائے

منتخب
ہماری پیشکش