0
Saturday 26 Nov 2011 13:14

دہشتگردی سے متاثرہ خیبر پختونخوا پرصوبائی حکومت نے نیا ٹیکس نافذ کر دیا

دہشتگردی سے متاثرہ خیبر پختونخوا پرصوبائی حکومت نے نیا  ٹیکس نافذ کر دیا
 اسلام ٹائمز۔ دہشتگردی سے متاثرہ صوبے پر خیبر پختونخوا حکومت نے نیا ٹیکس نافذ کر دیا ہے جو 26 نومبر سے نافذ العمل کر دیا گیا ہے، محکمہ بلدیات کی جانب سے جاری ہونے والے اعلامیہ کے مطابق شادی ہالز میں ائیر کنڈیشن ہال پر ماہانہ پانچ ہزار روپے، بغیر ائیر کنڈیشن ہالوں پر دو ہزار، ڈاکٹروں کے نجی کلینکوں پر دو ہزار روپے ماہانہ، ہسپتالوں پرپانچ ہزار روپے ماہانہ، کمرشل مقاصد کے لئے اداروں میں نصب ہر جنریٹر پر سالانہ پانچ ہزار روپے، لوڈ گاڑیوں پر سیس کی مد میں سوزوکیوں اور ڈاٹسن پر فی ٹرپ پچاس روپے، ٹرک اور ٹریکٹر پر فی ٹرپ 150 روپے، آٹھ اور آٹھ سے زائد بڑی گاڑیوں پر فی ٹرپ تین سو روپے ٹیکس عائد کیا گیا ہے، اندرون شہر پشاور میں دکانوں کے شٹر پر سالانہ پانچ ہزار روپے ٹیکس عائد کیا گیا ہے، بارگین سنٹروں سے ماہانہ ایک ہزار روپے، کارپٹ انڈسٹری پر ماہانہ تین ہزار روپے، کیٹرنگ اینڈ کراکری پر سالانہ دو ہزار روپے، آٹو رکشوں پر سالانہ پانچ سو روپے ٹیکس عائد کردیا ہے تاہم محکمہ ایکسائز کے مطابق یہ جنرل سیلز ٹیکس نہیں ہے بلکہ بلدیات کی جانب سے لگایا گیا ٹیکس ہے، اس سے قبل صوبائی حکومت نے لوڈ ان لوڈ ٹیکس بھی عائد کیا ہے جس کے خلاف صوبے بھر کے تاجر احتجاج کر رہے ہیں۔
خبر کا کوڈ : 117271
رائے ارسال کرنا
آپ کا نام

آپکا ایمیل ایڈریس
آپکی رائے

منتخب