0
Tuesday 5 Apr 2011 09:04

امریکی سرپرستی میں مزارات پر حملے اتحاد امّت پارہ پارہ کرنے کی سازش ہے، اسداللہ بھٹو

امریکی سرپرستی میں مزارات پر حملے اتحاد امّت پارہ پارہ کرنے کی سازش ہے، اسداللہ بھٹو
کراچی:اسلام ٹائمز۔جماعت اسلامی سندھ کے امیر و سابق رکن قومی اسمبلی مولانا اسداللہ بھٹو نے کہا ہے کہ مزارات، دینی اجتماعات اور رہنماؤں پر حملے امت کے اتحاد کو پارہ پارہ کرنے کی سازش ہے۔ قیام پاکستان سے لیکر اب تک نظام مصطفیٰ کی تحریک میں نوجوانوں نے قابل قدر کردار ادا کیا ہے۔ شباب ملّی کے نوجوانوں کو جماعت اسلامی کی"گو امریکہ گو"تحریک اور رابطہ عوام مہم سمیت ظلم کے نظام کیخلاف جاری جدوجہد میں اپنا بھرپور کردار ادا کرنا چاہئے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے قباء آڈیٹوریم میں شباب ملی سندھ کی صوبائی کونسل کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ اس موقع پر شباب ملّی پاکستان کے صدر عتیق الرحمٰن، صوبائی صدر محمد عظیم بلوچ، نائب صدر طارق میر جت اور جنرل سیکریٹری حسن جمیل بھی موجود تھے۔ صوبائی کنونشن میں کراچی سمیت سندھ بھر سے ضلعی ذمہ دار شریک تھے۔
 اسداللہ بھٹو نے کہا کہ ایک منظم سازش کے تحت قوم پرستی، لسانیت اور تعصب کی فضا قائم کر کے خیر کی قوّتوں کا راستہ روکا جا رہا ہے، ایک امت کے تصوّر کے بجائے شیعہ، سنّی، دیوبندی، بریلوی، بلوچ، پٹھان اور سندھی کے تصور کو آگے بڑھایا جا رہا ہے، ان تمام تر سازشوں کے پیچھے سامراجی ٹولہ کار فرما ہے جس کی سرپرستی امریکا کر رہا ہے۔ پاکستان کے عوام فوجی ڈکٹیٹر شپ، آمریت نما جمہوریت اور لوٹ مار کے سرمایہ دارانہ نظام سے بیزار ہو چکے ہیں۔ حالیہ سروے جو کہ 60 دیہات اور ملک کے چھ بڑے شہروں میں کیا گیا، اس کے مطابق 60 فیصد پاکستانیوں نے مہنگائی، بیروزگاری، بدامنی اور معاشی بدحالی سمیت تمام مسائل کا حل ملک میں اسلامی نظام کے قیام کو قرار دیا ہے۔ انہوں نے ملعون پادری کی جانب سے ایک بار پھر آقائے نامدار حضور کی شان میں گستاخی کے اعلان کو مغرب کی جانب سے مذہبی دہشتگردی کی بھیانک مثال اور امریکی سامراج کی طرف سے اسلام کیخلاف اعلان جنگ قرار دیا۔
خبر کا کوڈ : 63218
رائے ارسال کرنا
آپ کا نام

آپکا ایمیل ایڈریس
آپکی رائے

منتخب