0
Monday 25 Aug 2014 13:29
مذاکرات ناکام

یمن، بم دھماکے میں بریگیڈیئر جنرل اور 4 فوجی ہلاک

یمن، بم دھماکے میں بریگیڈیئر جنرل اور 4 فوجی ہلاک
اسلام ٹائمز۔ جنوب اور مشرقی یمن میں2 بم دھماکوں کے نتیجے میں بریگیڈیئر جنرل سمیت 4 فوجی اہلکار ہلاک اور 6 زخمی ہو گئے جب کہ باغیوں نے ٹیکنوکریٹس حکومت سمیت تمام تجاویز مسترد کر دیں۔ جنوبی یمن کے شہر عدن کی المنصورہ کالونی میں سینٹرل جیل سے کچھ فاصلے پر بریگیڈیئرجنرل کی گاڑی کو ریموٹ کنٹرول بم دھماکے سے اڑا دیا گیا، جس کے نتیجے میں بریگیڈیئر جنرل احمد محمد صالح العمری ہلاک اور ان کا بیٹا شدید زخمی ہو گیا۔ دوسری طرف وادی حضرموت میں سیون اور شبام شہروں کے درمیان فوجی جیپ سڑک کنارے نصب بارودی سرنگ سے ٹکرا گئی جس کے نتیجے میں زور دار دھماکا ہوا اور جیپ میں سوار 3 فوجی ہلاک اور 6 زخمی ہو گئے۔ 

یمنی صدر کی مذاکراتی ٹیم کے ترجمان عبدالمالک المخالفی نے یمن کے دارالحکومت میں مسلح احتجاجی کیمپ قائم کرنے والے باغیوں کے کمانڈر عبدالمالک الہوتی ساتھ مذاکرات ناکام ہونے کا اعلان کر دیا۔ انھوں نے بتایاکہ باغیوں نے ٹیکنوکریٹس کی حکومت سمیت تمام تجاویز کو مسترد کر دیا۔ اے ایف پی کے مطابق عبدالمالک المخالفی نے کہا کہ لگتا ہے باغی کمانڈر عبدالمالک الہوتی جنگ چاہتے ہیں۔ یاد رہے کہ اپنے مطالبات منوانے کے لیے ہزاروں مسلح باغیوں نے دارالحکومت صنعا میں وزارت داخلہ کے دفتر سے 100 میٹر کے فاصلے پر احتجاجی کیمپ قائم کر رکھا ہے، باغی 2004 سے مسلح جدوجہد کر رہے ہیں، مذاکراتی ٹیم نے باغی کمانڈرعبدالمالک الہوتی سے 4 دن مذاکرات کیے جو ناکام ہو گئے، باغی موجودہ حکومت کا خاتمہ اور پٹرولیم مصنوعات کی قیمت میں کمی کا مطالبہ کر رہے ہیں۔ تجزیہ کاروں کا کہناہے کہ باغی یمن کے شمالی علاقوں میں اختیارات اور مستقبل کی وفاقی حکومت میں معقول حصہ چاہتے ہیں۔
خبر کا کوڈ : 406557
رائے ارسال کرنا
آپ کا نام

آپکا ایمیل ایڈریس
آپکی رائے

منتخب